نانگا پربت Summary õ 105



10 thoughts on “نانگا پربت

  1. says:

    نیچے دریا کے کنارے ایک گھر تھا۔۔۔ اور ہم دیکھ سکتے تھے یہ اس کہ آس پاس کوئی آبادی نہ تھی۔۔۔ یہ وہی گھر تھا جس کی ہر شخص کو تمنا ہوتی ہے اور وہ نہیں ملتا اور اگر مل جائے تو وہ اس میں رہ نہیں سکتا کیونکہ وہ شہر کے شور کا عادی ہوچکا ہوتا ہے۔ مستنصر حسین تارڑ صاحب کا نام پہلی مرتبہ بچپن میں اپنی والدہ سے سنا تو تھا پر قسمت میں ان کو پڑھنا ایک طویل عرصے بعد لکھا تھا۔ تارڑ صاحب کہ اس سفر نامےکو پڑھنے سے قبل ایک دوست سے پتا چلا تھا کہ اگرچہ ان کی مہم جوئی بے مثال اور انکی کہانیاں اور داستانیں بے حد دلچسپ ہوتی ہیں پر ان میں ایک عنصر تلخ سچائی کا بھی ہوتا ہے۔ یہ دعوی شاید انکے اس اقتباس سے سچ ثابت ہوجاتا ہے جس کا ذکر مندرجہ بالا کیا گیا ہے۔ نانگا پربت ایک مہم جوئی کے پیار کا عملی مظاہرہ ہے۔ تارڑ صاحب کے ایڈونچرز اور ان سے متعلقہ کہانیاں پڑھنے والے کو ناصرف محظوظ کرتی ہیں بالکہ اس میں ایک عجیب کیفیت اور ایک عجیب چاہت بھی بیدار کردیتی ہیں۔ یہ چاہت ان خوبصورت نظاروں اور انکی دلفریب منظر کشی سے جنم لیتی ہے جن کا حوالہ اس کتاب میں دیا گیا ہے۔ تارڑ صاحب کا طرز تحریر نہایت سادہاور سلیس ہے۔ اور یہی وہ وجہ جس کہ باعث پڑھنے والا آپ کی داستانوں سے ناصرف لطف اندوز ہوتا ہے بالکہ آپ کی سبق آموز باتوں سے مستفید بھی ہوتا ہے اور آپ کو مذید پڑھنے کی خواہش کرتا ہے۔ وہ اپنے آپ کو اس کشش کے اگے بے بس اور لا چار بھی پاتا ہے اور ان وادیوں کی اور کھیچا چلا جاتا ہے جو اسے صدا دے رہی ہوتی ہیں۔ کیونکہ اگر زندگی اونچائیوں کو مسخر کرنے کا نام نہیں، تو پھر کس کا نام ہے؟


  2. says:

    '' تقدس صرف شان و شوکت سے ہی ظاہر نہیں ہوتا بلکہ اس کا پیمانہ وہ احساس ہے جو کسے عبادت گاہ میں داخل ہوتے ہوئے آپ کے روم روم میں پھوٹتا ہے ''مستنصر کی اس کتاب سے پہلے ہم سفرناموں اور ان میں بسنے والی دنیائوں سے ناآشنا تھے مگر جب اماں کے پلندوں سے نکال کر اس کو پڑھا تو نہ صرف سفرنامے پڑھنے کی دلچسپی بڑھی بلکہ پہاڑوں کی اس دنیا کا عشق بھی اندر ابھر آیا اور ہر اس جگہ کو انہی کے بتائے ہوئے ذاوییون سے دیکھنے اور محسوس کرنے کا من کیا۔ یہ کتاب پڑھنے والے کو پہاڑوں کے ایک حقیقی روپ سے آشنا کرواتی ہے اور زندگی کا ایک اہم سبق بھی سکھاتی ہے کہ ہم کتنی ہی کوشش کیوں نہ کرلیں اپنی منزلِ مقصود تک پہنچنے کے لیے مگر کبھی کبھار وہاں کی ہوائوں کا رخ آپکا ساتھ نہیں دیتا اور ایک دوسرے راستے کی طرف آپ کو منتقل کردیتا ہے۔ آپ کو بس ان راہوں پر خوش اور مطمعین رہنا آنا چاہئے مگر ساتھ ساتھ اپنی جستجو کو کبھی مرنے نہیں دینا ہے۔ آج نہیں تو کل صحیح


  3. says:

    Any idea how to download this book


  4. says:

    love this


  5. says:

    Read it


  6. says:

    How can i download this book ?


  7. says:

    Pehlay bood parhnay do phir tareef b krwa lena


  8. says:

    تیز ہوا سامنے نانگا پربت دُھواں لگی گرم کافی اور خیمے کا پھڑپھڑاتا ہوا پردہPicture perfect right? Nanga Parbat the killer mountain standing proudly somewhere between the Karakorum range The in depth of this tale feels like this is a place out of this world with it's snowy peaks like touching the clouds glaciers lakes jungles and fairy meadows which as the name suggests comes straight out of some fairy tale No one's is to be found here except the mightiness of the mountains A collection of wonders Silent valleys and rocks Solitude all around


  9. says:

    When I at first read 'Andalus mein Ajnabi' I was in awe of his writing style It was mesmerizing But his local travel writings are not up to the mark or does not inspire others to travel along his footsteps to Nanga Parbat or Gilgit Baltistan to later I traveled and did not find it worthy of visit However travel loving people may find it helpful


  10. says:

    This is one of the travel stories safarnama of Mustansar Hussain Tarar Urdu مستنصر حسين تارڑ he is a famous actor writer compere high altitude enthusiast and a mountaineer in his own right Tarar is regarded as great contributor to promoting tourism in Northern Areas of Pakistan He has undertaken many tourism and trekking expeditions including extremely strenuous treks to places like K 2 base camp and through one of the world most dangerous 'chitti buoi' glacier Tarar opines to the concurrence of most adventure writers that words and even pictures cannot encompass the astounding beauty of nature in its true spirit Tarar's first book Nikley Teri Talaash Main a travelogue of Europe was published in 1971 he has so far over forty titles to his credit which include all genre of literature; travelogues novels short stories and collection of his newspaper columns and Television dramas He has been the best seller fiction writer of Pakistan for the last fifteen yearsProfound Kamran Khan


Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

نانگا پربت

Read & Download نانگا پربت

د ہے، اس چوٹی کو ’خونی چوٹی‘ کے نام سے بھی جانا جاتا ہے۔ جون میں اس پہاڑی پر فوجی وردی میں ملبوس دہشت گردوں نے مہم جوئی کرنے والے غیر ملکی کو راہی نانگا پربت کا اردو صفحہ UrduSafha کشمیری زبان میں نانگا پربت کے معنی ہیں برہنہ پہاڑ،کیونکہ اس کی ڈھلوانیں سبزے سے عاری ہیں۔ لیکن یہ نام اس لیے غلط لگا کہ برف تو اس کا پیرہن ہے جیسے کسی اپسرا کا سپید بے داغ مرمریں مجسمہ ہو۔مقامی زبان شینا میں اسے دیامیر کہ موت کی وادی نانگا پربت نانگا پربت سر کیے جانے کے ساٹھ برس آسٹریا کے کوہ پیما ہیرمن بُوہل نے ٹھیک ساٹھ برس پہلے ء میں آج ہی کے روز یعنی تین جولائی کو پاکستان میں واقع دنیا کی ویں بلند ترین چوٹی نانگا پربت کو سر کیا تھا۔ لاہور سے نانگا پربت تک سفر نامہ | Asal Media اصل میڈیا لاہور سے نانگا پربت تک سفر نامہ تحریر ڈاکٹر محمد رضا ایڈووکیٹ وکالت دنیا کا باوقار پیشہ اور عظیم ترین فریضہ ہے جو عبادت سے کم نہیں۔ شعبہ وکالت وکیل کو عزت کے ساتھ معاشرے میں اعلیٰ مقام Nanga Parbat – Wikipedia tiếng Việt Nanga Parbat Ngọn ni trần trụi Urdu نانگا پربت nəŋɡaː pərbət̪ với chiều cao mt ft đy l ngọn ni cao thứ thế giới Ngọn ni nằm ở sườn ty của dy ni Hi M Lạp Sơn thuộc khu vực Gilgit Baltistan của Pakistan نانگا پربت کا عقاب – سمیرا انجم – Kitaab Nama ’’نانگا پربت‘‘ اک عشق کا نام ہے اور یہ لا حاصل بھی ہے اور حاصل بھی۔ لاحاصل اس طرح کہ ابھی تک اس کے وصل سے فیض یاب نہ ہوسکے روبرو چہرہ بچہرہ۔ لیکن یہ عشق حاصل ایسے ہے کہ اس بارے جہاں سے جو کچھ ملتا پڑھ لیتے، جو نظر آتا اس نانگا پربت، ہم اور ٹوماس جویریہ ذاکر DaleelPk کہتے ہیں نانگا پربت کا دلکش نظارہ کرنا ہو تو پریوں کی چراہ گاہ یعنی فیری میڈوز جایا جائے۔ یہ ایک جنت نظیر طلسماتی دنیا ہےجہاں لوک کہانیوں کے مطابق سبز غالیچوں پر رقصاں پریاں ہرآنےوالےکا استقبال کرتی ہیں۔ مگر پریوں کے اس نانگا پربت؟ | صفحہ | اردو محفل فورم تو کیا اس کا نام ننگا پربت ہے؟ یا نانگا پربت؟ انگریزی میں تو دونوں صورتوں میں Nanga Parbat ہی لکھا جائے گا۔ مریم ویبسٹر لغت کے مطابق اس کا تلفظ “ننگا پربت” ہے۔ علما کا اس بارے کیا خیال ہے؟ مزید نمائش کے لیے کلک کریں۔۔۔ اس طر تیز ہوا سامنے نانگا پربت دُھواں لگی گرم کافی اور خیمے کا پھڑپھڑاتا ہوا پردہPicture perfect right Nanga Parbat the killer mountain standing proudly somewhere between the Karakorum range The in depth of this tale feels like this is a place out of this world with it's snowy peaks like touching the clouds glaciers lakes jungles and fairy meadows which as the name suggests comes straight out of some fairy tale No one's is to be found here except the mightiness of the mountains A collection of wonders Silent valleys and rocks Solitude all around

review Þ PDF, eBook or Kindle ePUB free Ó Mustansar Hussain Tarar

نانگا پاربات ویکی‌پدیا، دانشنامهٔ آزاد نانگا پاربات به انگلیسی Nanga Parbat به اردو نانگا پربت به معنی کوهستان برهنه کوهی در رشته کوه هیمالیا است که در پاکستان قرار دارد ارتفاع آن ۸۱۲۶ متر از سطح دریا و نهمین قله بلند روی زمین است صعود به آن از مشکل‌ترین Nanga Parbat ♪ Music by CUSCO نانگا پربت Nanga Parbat Urdu نانگا پربت naːŋɡaː pərbət̪ locally known as Diamer دیامر is the ninth highest mountain in the world at metres ft above sea level Nanga Parbat Wikipedia Nanga Parbat has tremendous vertical relief over local terrain in all directions To the south Nanga Parbat has what is often referred to as the highest mountain face in the world the Rupal Face rises m ft above its base To the north the complex somewhat gently sloped Rakhiot Flank rises m ft from the Indus River valley to the summit in just km mi نانگا پربت کا خوبصورت نظارہ YouTube Enjoy the videos and music you love upload original content and share it all with friends family and the world on YouTube نانگا پربت آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا نانگا پربت دنیا کی نویں اور پاکستان کی دوسری بلند ترین چوٹی ہے اور اس اونچائی فٹ ہے اور پاکستان علاقہ گلگت بلتستان کے علاقہ میں واقع ہے ۔ یہ کوئی واحد پہاڑ نہیں ہے ۔ بلکہ بلند ہوتی گئی پے در پے پہاڑوں اور عمودی چٹانوں نانگاپربت وکیپیڈیا ناں نانگا پربت سنسکرت تے پنجابی دا بول اے ایہ دو بولاں نال رل کے بنیا اے نانگا تے پربت؛ نانگا ننگا، بغیر کپڑیاں توں پربت پہاڑ۔ انگریزی چ اینوں کلر ماؤنٹین یعنی قاتل پہاڑ وی کیندے نیں ایس تے سب توں پہلے ہرمن بوہل اک نانگا پربت وڪيپيڊيا نانگا پربتانگريزي Nanga Parbat پاڪستان جي انتظامي صوبي گلگت بلتستان جي ضلعي ديامر ۾ واقع آهي ۽ دنيا جي نائين وڏي جابلو چوٽي آھي جيڪا سمنڊ جي سطح کان ميٽر بلند آھي نانگا پربت سنسڪرت ٻوليءَ جو لفظ آهي جنھن جي معنیٰ آھي نانگا پاربات ویکی‌پدیا، دانشنامهٔ آزاد نانگا پاربات به انگلیسی Nanga Parbat به اردو نانگا پربت به معنی کوهستان برهنه کوهی در رشته کوه هیمالیا است که در پاکستان قرار دارد ارتفاع آن ۸۱۲۶ متر از سطح دریا و نهمین قله بلند روی زمین است صعود به آن از مشکل‌ترین نانگا پربت کا خوبصورت نظارہ YouTube Enjoy the videos and music you love upload original content and share it all with friends family and the world on YouTube نانگا پربت آزاد دائرۃ المعارف، '' تقدس صرف شان و شوکت سے ہی ظاہر نہیں ہوتا بلکہ اس کا پیمانہ وہ احساس ہے جو کسے عبادت گاہ میں داخل ہوتے ہوئے آپ کے روم روم میں پھوٹتا ہے ''مستنصر کی اس کتاب سے پہلے ہم سفرناموں اور ان میں بسنے والی دنیائوں سے ناآشنا تھے مگر جب اماں کے پلندوں سے نکال کر اس کو پڑھا تو نہ صرف سفرنامے پڑھنے کی دلچسپی بڑھی بلکہ پہاڑوں کی اس دنیا کا عشق بھی اندر ابھر آیا اور ہر اس جگہ کو انہی کے بتائے ہوئے ذاوییون سے دیکھنے اور محسوس کرنے کا من کیا۔ یہ کتاب پڑھنے والے کو پہاڑوں کے ایک حقیقی روپ سے آشنا کرواتی ہے اور زندگی کا ایک اہم سبق بھی سکھاتی ہے کہ ہم کتنی ہی کوشش کیوں نہ کرلیں اپنی منزلِ مقصود تک پہنچنے کے لیے مگر کبھی کبھار وہاں کی ہوائوں کا رخ آپکا ساتھ نہیں دیتا اور ایک دوسرے راستے کی طرف آپ کو منتقل کردیتا ہے۔ آپ کو بس ان راہوں پر خوش اور مطمعین رہنا آنا چاہئے مگر ساتھ ساتھ اپنی جستجو کو کبھی مرنے نہیں دینا ہے۔ آج نہیں تو کل صحیح Deathgame (Hardy Boys: Casefiles, you love upload original content and share it all with friends family and the world on YouTube نانگا پربت آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا نانگا پربت دنیا کی نویں اور پاکستان کی دوسری بلند ترین چوٹی ہے اور اس اونچائی فٹ ہے اور پاکستان علاقہ گلگت بلتستان کے علاقہ میں واقع ہے ۔ یہ کوئی واحد پہاڑ نہیں ہے ۔ بلکہ بلند ہوتی گئی پے در پے پہاڑوں اور عمودی چٹانوں نانگاپربت وکیپیڈیا ناں نانگا پربت سنسکرت تے پنجابی دا بول اے ایہ دو بولاں نال رل کے بنیا اے نانگا تے پربت؛ نانگا ننگا، بغیر کپڑیاں توں پربت پہاڑ۔ انگریزی چ اینوں کلر ماؤنٹین یعنی قاتل پہاڑ وی کیندے نیں ایس تے سب توں پہلے ہرمن بوہل اک نانگا پربت وڪيپيڊيا نانگا پربتانگريزي Nanga Parbat پاڪستان جي انتظامي صوبي گلگت بلتستان جي ضلعي ديامر ۾ واقع آهي ۽ دنيا جي نائين وڏي جابلو چوٽي آھي جيڪا سمنڊ جي سطح کان ميٽر بلند آھي نانگا پربت سنسڪرت ٻوليءَ جو لفظ آهي جنھن جي معنیٰ آھي نانگا پاربات ویکی‌پدیا، دانشنامهٔ آزاد نانگا پاربات به انگلیسی Nanga Parbat به اردو نانگا پربت به معنی کوهستان برهنه کوهی در رشته کوه هیمالیا است که در پاکستان قرار دارد ارتفاع آن ۸۱۲۶ متر از سطح دریا و نهمین قله بلند روی زمین است صعود به آن از مشکل‌ترین نانگا پربت کا خوبصورت نظارہ YouTube Enjoy the videos and music Informal Work Talks and Teachings you love upload original content and share it all with friends family and the world on YouTube نانگا پربت آزاد دائرۃ المعارف، '' تقدس صرف شان و شوکت سے ہی ظاہر نہیں ہوتا بلکہ اس کا پیمانہ وہ احساس ہے جو کسے عبادت گاہ میں داخل ہوتے ہوئے آپ کے روم روم میں پھوٹتا ہے ''مستنصر کی اس کتاب سے پہلے ہم سفرناموں اور ان میں بسنے والی دنیائوں سے ناآشنا تھے مگر جب اماں کے پلندوں سے نکال کر اس کو پڑھا تو نہ صرف سفرنامے پڑھنے کی دلچسپی بڑھی بلکہ پہاڑوں کی اس دنیا کا عشق بھی اندر ابھر آیا اور ہر اس جگہ کو انہی کے بتائے ہوئے ذاوییون سے دیکھنے اور محسوس کرنے کا من کیا۔ یہ کتاب پڑھنے والے کو پہاڑوں کے ایک حقیقی روپ سے آشنا کرواتی ہے اور زندگی کا ایک اہم سبق بھی سکھاتی ہے کہ ہم کتنی ہی کوشش کیوں نہ کرلیں اپنی منزلِ مقصود تک پہنچنے کے لیے مگر کبھی کبھار وہاں کی ہوائوں کا رخ آپکا ساتھ نہیں دیتا اور ایک دوسرے راستے کی طرف آپ کو منتقل کردیتا ہے۔ آپ کو بس ان راہوں پر خوش اور مطمعین رہنا آنا چاہئے مگر ساتھ ساتھ اپنی جستجو کو کبھی مرنے نہیں دینا ہے۔ آج نہیں تو کل صحیح

Mustansar Hussain Tarar Ó 5 Free download

ویکیپیڈیا نانگا پربت دنیا کی نویں اور پاکستان کی دوسری بلند ترین چوٹی ہے اور اس اونچائی فٹ ہے اور پاکستان علاقہ گلگت بلتستان کے علاقہ میں واقع ہے ۔ یہ کوئی واحد پہاڑ نہیں ہے ۔ بلکہ بلند ہوتی گئی پے در پے پہاڑوں اور عمودی چٹانوں نانگا پربت وڪيپيڊيا نانگا پربتانگريزي Nanga Parbat پاڪستان جي انتظامي صوبي گلگت بلتستان جي ضلعي ديامر ۾ واقع آهي ۽ دنيا جي نائين وڏي جابلو چوٽي آھي جيڪا سمنڊ جي سطح کان ميٽر بلند آھي نانگا پربت سنسڪرت ٻوليءَ جو لفظ آهي جنھن جي معنیٰ آھي Nanga Parbat Wikipedia Nanga Parbat has tremendous vertical relief over local terrain in all directions To the south Nanga Parbat has what is often referred to as the highest mountain face in the world the Rupal Face rises m ft above its base To the north the complex somewhat gently sloped Rakhiot Flank rises m ft from the Indus River valley to the summit in just km mi نانگا پربت، جگلوٹ اور جنات کا قبضہ صدائے عدلقیصرعباس صابر نانگا پربت، جگلوٹ اور جنات کا قبضہ صدائے عدلقیصرعباس صابر August ; عقائد ، ریاست اور مٹھی بھر تکفیری مولوی ۔۔حسنین رضوی August ; سید مجاہد علی کاتجزیہ۔۔جنرل صاحب نانگا پربت، کوہ پیماؤں کا مقتل بھی، جنوں بھی Opinions نانگا پربت کو پہلی مرتبہ اسٹریلیا کے ہیرمن بوہل نے ء میں سر کیا۔ نانگا پربت مہمات کی تاریخ پر نظر ڈالیں تو پائیں گے کہ اب تک کوہ پیما اس قاتل پہاڑ کو سر کرنے میں کامیاب ہوئے ہیں۔ اٹلی کے نانگا پربت ایکسپریس اردو یہ اعضاء نانگا پربت کی طرف سے دنیا کو چیلنج ہوتا ہے تم میں اگر ہمت اور جرأت ہے تو آئو اور میرے ننگے جسم کو ہاتھ لگا کر دکھائو‘ آج تک صرف دو ٹیمیں اس کے دامن عظمت کو ہاتھ لگانے میں کامیاب ہوئی ہیں‘ ایک ء اور دوسری ء میں Nanga Parbat ♪ Music by CUSCO نانگا پربت Nanga Parbat Urdu نانگا پربت naːŋɡaː pərbət̪ locally known as Diamer دیامر is the ninth highest mountain in the world at metres ft above sea level Nanga Parbat Carte Gilgit Baltistan Pakistan Mapcarta Le Nanga Parbat est le neuvime plus haut sommet du monde dans la chane de l'Himalaya Nanga Parbat sur le site Mapcarta la carte libre Nanga Parbat نانگا پربت by Mustansar Hussain Tarar Nanga Parbat نانگا پربت book Read reviews from the world's largest community for readers نانگا پربت غیر ملکی کوہ پیما لاپتہ Pakistan Dawn News نانگا پربت دنیا کی ویں بلند ترین چوٹی ہے، جو سطح سمندر سے ہزار میٹر بلن Read it